Reality of Space Science & Satellites

کتاب الارض المسطحۃ

باب اسپیس سائنس اور سیٹلائیٹس کی حقیقت
اس باب میں آپ کو ایسے بہت سے سوالات سمیت مندرجہ ذیل نکات پر مفصل اور جامع مباحث میسر ہونگی،اسپیس سائنس کی ابتداءآرتھر سی کلارک، والٹ ڈزنی اور سٹینلی کیوبرک کا اسپیس سائنس میں کردار, آپریشن فش باؤل اور آپریشن پیپر کلپ کا اسپیس سائنس میں کردار, کتاب زمین گردش کرتا گلوب نہیں اُس کے200 ثبوت سے اس موضوع پر اقتباسات، اُن پر گلوبرز کے جوابات اور ہمارے جواب الجواب, سی جی آئی کیا ہوتا ہے؟سیٹلائیٹس اور دنیا میں مواصلاتی نظام کی حقیقت, جی پی ایس اصل میں گراؤنڈ پوزیشنگ سسٹم ہے۔

باب: اسپیس سائنس اور سیٹلائیٹس کی حقیقت، اس لنک میں موجود ہے؛

https://drive.google.com/open?id=1Cxr2lB6UuXqdYVPqEdBoIpUxQ8BME0fv

History of Flat Earth & it’s Reality according to Islam

کتاب الارض المسطحۃ
باب ارض المسطحۃ کی تاریخ اور حقیقت
اپریل 2018 میں ہم نے یہ باب بطور رسالہ حقیقۃ الارض من القرآن الحکیم کے نام سے جاری کیا تھا ۔جو مکرم صاحب کے ارض المسطحۃ کے خلاف لکھے گئے ایک مضمون کا تعاقب تھا۔ رسالہ جاری ہونے کے بعد محترمی مکرم صاحب سے بحث و مباحث دوبارہ سے شروع ہوئی اور اُن کو پیش کیے گئے حقائق جو اِس رسالے اور ہماری انکے ساتھ بحث میں اُن کے سامنے رکھے گئے تھے، اُنھوں نے اپنے مؤقف سے رجوع فرمایا۔ چونکہ یہ رسالہ اپنے آپ میں ایک جامع کلام تھا اور ترتیبی لحاظ سے ہماری کتاب کا حصہ تھا۔اِسی وجہ سے ہم نے اِسے اپنی اِس اہم کتاب الارض المسطحۃ کا حصہ بنانے کا فیصلہ کیا تاکہ قارئین کو مکمل کلام ایک ہی جگہ میسر ہو۔ چونکہ محترمی مکرم صاحب اپنے مضمون سے رجوع کر چکے تھے لہذا اِس رسالے کو علمی تعاقب کے اصول سے ہٹا کر ہم اِسے بطور باب جاری کر رہے ہیں۔اِس باب میں آپ کو ارض المسطحۃ کی تاریخ، قرآن و سنت کی رو سے اِس کی حقیقت پر مبنی با دلیل مباحث میسر ہونگی۔ ہم نے اِس باب میں پوری احتیاط کے ساتھ حوالہ جات ہر ممکن مقام پر ساتھ ساتھ دے رکھے ہیں۔ قرآن کی آیات کے ترجمے کے لیے مولانا جونا گڑھی ؒ کے ترجمہ سے استفادہ کیا گیا ہے۔ قرآن کی تفسیر کے لیے عالم اسلام کی سب سے معتبر اور متفقہ تفسیر ابن کثیر کے تخریج شُدہ نسخے المصباح المنیر سے اسفتادہ کیا گیا ہے۔ قرآن کے الفاظ کی لغوی مباحث میں امام راغبؒ کی مشہور و معتبر لغت مفرادات القرآن سے استفادہ کیا گیا ہے تاکہ قارئین کو سب سے بہترین اور اصل کلام دلیل کے ساتھ مطالعہ کرنے کے لیے مل سکے۔ باب میں حسب روایت گلوبرز حضرات کا کلام لال سیاہی اور “” کے اندر واضح لکھا ہوگا۔
باب: ارض المسطحۃ کی حقیقت
اس لنک میں موجود ہے؛


https://drive.google.com/open?id=17Alcz3J4C9x03FSK6UTfewRbiZVJN7p5



گلوب کرویچر ڈیبنک

زمین گلوب نہیں ایک فلیٹ پلین ہے۔

اکثریہ دعوی عام دیکھنے کو ملتا ہے کہ چونکہ سمندر پر کشتیاں اُفق پر غائب ہو جاتی ہیں اور وہ اِسی وجہ سے ہوتا ہے کہ وہ کشتیاں زمین کےمبینہ کرویچر کے نیچے چلی جاتی ہیں۔ اُسی کی بین نفی کے لیے ایمپٹی ہورائزن ٹیم کی جانب سے یہ ویڈیو تیار کر گئی ہے کہ کیسے کسی بھی اچھے اور طاقتور زووم والے کیمرے کی مدد سے وہی غائب شُدہ کشتیاں بالکل واضح نظر آ جاتی ہیں۔

https://youtu.be/0xWsuFLdgBs

کے وائے ای سیریز کی پہلی پوسٹ

نوٹ،یہ پوسٹ اپریل 2018 میں پہلی بار جاری کی گئی تھی

یہ پوسٹ کے سلسلے کا کوڈ نیم کے وائے ای ہو گا۔ تاکہ سب ممبران کو گروپ سرچ میں تلاش کرنے میں آسانی ہو۔

انگریزی کا ایک مشہور معقولہ ہے Know Your Enemy کہ اپنے دشمن کو پوری طرح جانو پھر اسے شکست دینے کی منصوبہ بندی کرو.
چونکہ ہم نے شروع میں یہ کہہ دیا تھا کہ نہ ہم کبھی جھوٹ بولیں گے نہ بولنے دیں گے اور یہ کہ فلیٹ ارتھ خالی زمین کی ہئیت کی بابت بحث نہیں بلکہ عالمی استعمار کی پوری طرح سمجھ ہے. اسی وجہ سے ہم آج سے وہ کام کرنے جا رہے ہیں جو آج سے پہلے کسی بھی فلیٹ ارتھ فورم نے ابھی تک نہیں کیا کہ ون ورلڈ ون گورنمنٹ جس کے موجد اور مدافعين فری میسنز ہیں انکی اپنی کتابوں میں جو کچھ لکھا ہے اس کے اہم نکات عوام کے سامنے لائے جائیں.

فری میسنز وہ تحریک ہے جسکے اندر ایک منظم ڈھانچہ ہے جو 1 ڈگری سے شروع ہو کر 32 ڈگری تک جاتا ہے. اسکے بعد 33 ڈگری آتی ہے جو سب فری میسنز کے باسسز کا مقام ہے. ان ڈگریز جو کہ حقیقت میں عہدے ہیں ان کی بابت بھی کلام چلتا رہے گا.

یہ بھی حقیقت ہے کہ عوام کو نہ تو کتابیں پڑھنے کا شوق رہا اور نہ ہی ان کو تلاش کرنے کا. جبکہ آج ہر کتاب کوشش کر کے تلاش کی جا سکتی ہے اور اپنے حقیقی علم کو استعمال کرتے ہوئے اس کے سورس اور حقیقی سمجھ کی گہرائیوں تک جایا جا سکتا ہے.
میں یہ بھی بتانا چاہوں گا کہ میں مسطحتی سے پہلے تیکنیکی اعتبار سے ایک قسم کا فری میسن ہی تھا وہ اس وجہ سے کہ ماضی میں فری میسنز کو جوائن کرنے کی غرض سے میں نے نہ صرف داخلہ فارم بھیجا تھابلکہ انٹرویو بھی دے دیا تھا. جو احباب اس بابت جانتے ہیں کہ انٹرویو کس کا کیا جاتا ہے وہ جانتے ہوں گے کہ اسی انٹرویو کے لیے پہلے بہت سا مواد پڑھ کر اسی انٹرویو کی تیاری کرنا ہوتی ہے. ہم نے وہ سارا مواد نہ صرف پڑھا بلکہ یاد بھی رکھا. ٹائم بارڈر ڈیجٹل فائلوں کی شکل میں وہ مواد امیدوار کو ایک مخصوص وقت میں تیاری کے لیے دیا جاتا ہے. احباب گواہ ہیں کہ ماضی قریب میں فری میسنری کے دروازے سے واپس ہوا تھا. اسکی وجہ صرف ایک تھی کہ یہ پہلے سے امید وار کو کہہ دیا جاتا ہے کہ یہ ون وے ٹکٹ ہے اگر آپ آ گئے تو مر کر ہی واپس جا سکتے ہیں اور جب تک زندہ ہیں تب تک فری میسن ہیں اور آرڈر کے جاری کردہ تمام قوانین آپ پر لاگو ہیں.
سب سے بڑا مسئلہ میرے لیے واپس ہونے کی وجہ یہ تھا کہ ٹھیک 10 ڈگری کے بعد جو کچھ ہوتا ہے اس میں سب سے پہلے ایمان ہی جاتا ہے.
یہ بات آپ خود پکڑ لیں تو پکڑ لیں آپکو کبھی نہیں بتائی جائے گی. اب میں اس پوسٹ کے مدعے کی طرف آتا ہوں.
فری میسنز میں ہر فری میسن کا کوڈ آف کنڈکٹ ہوتا ہے اصل مصدر اور بنیاد York Rite freemasonry ہے جس کا آئین البرٹ پایئک 33 ڈگری ماسٹر فری میسن نے باقاعدہ کتاب کی شکل میں جاری کیا تھا. اس کتاب کا نام Morals and Dogma ہے. مطلب اخلاقیات اور تعلیمات. کہنے کو یہ وہ کتاب ہے جو عام انسان کی سمجھ سے اوپر ہے. اسکی وجہ اسکی کوڈنگ ہے جسے وہی کھول سکتا ہے جو فری میسن ہو یا فری میسن کے بنیادی اور حقیقی تعامل خود سے کر چکا ہو. میں اپنے احباب کی بابت چاہتا ہوں کہ وہ اپنے اصل دشمن فری میسن کو پہچانیں اور اسکو پوری طرح سے سمجھیں.
اسی وجہ سے آج سے ایک سلسلہ شروع کیا جارہا ہے جس میں فری میسنری کی ہر ڈگری کی بابت بنیادی سمجھ اور اسکے اہم نکات بطور ثبوت جو کہ فری میسن مصدر کے سکرین شاٹ ہونگے وہ بھی پوری سمجھ کے ساتھ پیش کیے جائیں گے.
اس فورم کے غیر سنجیدہ ممبران سے درخواست ہے کہ وہ اس فورم سے ہماری اس پوسٹ کے بعد خود ہی تشریف لے جائیں ہمیں آپکی بالکل ضرورت نہیں ہے.
ہمارا مشن ہماری ذات سے بہت ارفع ہے ہم آپ لوگوں کے ساتھ لا حاصل بحث میں وقت بالکل برباد نہیں کرنا چاہتے. اس فورم کے تمام ایڈمنز مارک کر لیں سب ٹرولز آپ سب کو معلوم ہیں. جو چھپے ہیں جیسے ہی سامنے آئیں تو اس پوسٹ کی رو سے آپ انکو بنا وارننگ جاری کیے گروپ بدر کرنے میں آزاد ہیں.
لہذا وہ ممبران جو انڈاکٹرینینشن سے جاگ چکے ہیں وہ اب سے اپنے لیول کو بڑھائیں اور آگے بڑھیں یاد رکھیں آپ کا مقابلہ اس دشمن سے ہے جو ہر طرح کی اعلی ترین اخلاقی اقدار کا آپس میں پوری طرح پاس رکھتا ہے مگر ٹاپ لیول پر انسانیت کا خون نچوڑ کر اپنے ڈھانچے کو زندہ رکھتا ہے. یہ وہ دشمن ہے جو کبھی جھوٹ کو برداشت نہیں کرتا مگر ٹاپ لیول پر جھوٹ بولنا لازم جانتا ہے.
یہ وہ دشمن ہے جس کے ممبر بننے کے تین بنیادی اصول ہیں
You should have high moral values
You should sacrifice your self for your rite
You should believe A creator of this intelligent design.
تیسرے اصول پر پریشان مت ہوں یہ شروع میں آپ کے مذہب کے مطابق ہی ہوتا ہے جسے مسلمان کے لیے اللہ. عیسائی اور یہودی کے لیے یہووا
مگر جیسے ہی آپ 10 ڈگری پار کرتے ہیں تو یہ عقیدہ بڑی آہستگی سے ختم کیا جاتا ہے کہ 32 ڈگری تک وہ سپریم بینگ، ون کریٹر ابلیس لعین اور اسکی انسانی شکل أرض کا پہلا فری میسن خدا نمرود لعین بن جاتا ہے 32 ڈگری اور اسکے آگے اسی کی پوجا کی جاتی ہے اس بابت بہت کچھ آگے آئے گا.
یاد رکھیں فری میسنری کی بنیادی شرائط بہت اہم ہیں اسکو جاننے کے لیے.
باقی جو آپ کے سوالات و اشکالات اس پوسٹ کی بابت ہوں آپ پوچھ سکتے ہیں. ہر ممکن جواب پوری سچائی کے ساتھ دیا جائے گا. جس بات کا ہمیں نہیں پتہ ہو گا سلف کے منہج تعامل لا ادری پر ہمیشہ کی طرح عامل رہیں گے ان شاءاللہ
اپنی ذات سے باہر نکلئے اور دوسروں کے لیے جینا سیکھیں کہ آپ کو جسد واحد کی طرح امت مسلمہ کا دفاع کرنا ہے.
اپنے آپکو اپنے اصلی دشمن فری میسن کی اعلی اخلاقی اقدار جو کہ حقیقت میں آسمانی و الہامی اقدار ہیں کہ جھوٹ نہیں بولنا ایک دوسرے کی مدد کرنا اور مالک حقیقی اللہ تعالیٰ پر مضبوط ایمان کو ہر صورت میں اپنے آپ کے اوپر لاگو کرنا ہے. تن آسانی سے کبھی کچھ نہیں ہوا اور نہ ہونا ہے جو سو رہا ہے اسے جگائیں ضرور مگر اپنا وقت اس پر برباد مت کریں بلکہ آگے بڑھیں اور کئی سوئے ہوئے آپکے منتظر ہیں
اللہ تعالیٰ ہم سب کا حامی و ناصر ہو اور رسول اللہ صل اللہ علیہ والہ و سلم کے سچے دین پر جینے اور مرنے کی توفیق عطا فرمائے اور ہم سب کو باعمل اور اعلی اخلاقی اقدار کا عامل مسلمان بنائے. آمین ثم آمین
سب مسلمانوں کے لئے دعائے خیر کی خصوصی اپیل
حافظ أبو تیمیہ الاندلسی.

میسنری کے دس احکامات

کے وائے ای سیریز

دس احکامات (the Ten commandments )

یہ ذکر گذر چکا کہ فری میسن ایک مضبوط مذہب ہے جو سوائے ملحد کے ہر مذہب کے ماننے والے کو لے سکتا ہے مگر کوئی بھی ملحد کسی صورت فری مسین نہیں بن سکتا۔ یہ بھی بین ہے کہ فری میسن مذہب اصل میں شروع سے لے کر اسلام تک گذرے مذاہب کا ایک متنجن ہے۔ جس میں غالب عنصریہود کبالسٹ کا ہے کبالسٹ یہود کا سب سے ایلیٹ فرقہ ہے جن کے ہاں عام یہود کا وہی مقام ہے جو یہود کے ہاں باقی مذاہب کے ماننے والون کا۔ مگر فری میسن میں ایسا بالکل نہیں ہے ہر وہ آدمی جو فری مسین بن گیا وہ اپنی ڈگری کے لحاظ سے ان کے درمیان عزت و تقریم پاتا ہے۔ چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔

ابھی تک پہلی ڈگری جاری ہے جس کے شروع میں ہی فری مسین کو بنیادی دس احکامات سکھا دیے جاتے ہیں۔
یہ وہی احکامات ہیں جو کسی نہ کسی شکل میں دنیا کے ہر الہامی مذہب میں مشترکہ ہیں۔ اسی مقام سے پہلی ڈگری پر موجود فری مسین کو ان دس احکامات کا ہر صورت پاس، لحاظ اور ان سے وفادار رہنا لازم ہو جاتا ہے۔
اُن دس احکام کو سکرین شاٹ میں ملاحظہ کیا جا سکتا ہے۔ یہ من و عن ہبرو بائبل میں ذکر کردہ دس احکام ہیں۔ مگر اصل مسلہ ادھر ہی سے شروع ہو جاتا ہے کہ یہ کون سا رب ہے؟ وہ رب جو آدم و ابراہیمؑ والا ہے یا وہ جسے فری میسن 30 ڈگری پر جا کر آشکار کرتے ہیں۔
ان کے ہاں سپریم بینگ یہی لگتا ہے کہ وہی ہے جو حقیقت میں مالک کائنات اللہ تعالیٰ ہے۔ مگر جیسے ہی 30 ڈگری آتی ہے تو یارک رائٹ میں باقاعدہ طور ہر یہ آشکار ہوتا ہے کہ نہیں وہ رب نہیں ہے بلکہ لوسیفر جو انسانی شکل میں سب سے پہلے نمرود کی شکل میں آیا تھا یہ وہ رب ہے۔
یاد رہے جس نے نمرود کی بابت دھوکہ کھایا وہ اصل کھیل کو ہی سمجھنے سے قاصر رہا۔ نمرود وہ پہلا انسان تھا جس نے اپنے منہ سے اپنے رب ہونے کا اعلان کیا تھا۔ اس سے پہلے کسی انسان کی یہ جرات نہیں ہوئی تھی کہ وہ اپنے منہ سے اپنے آپ کو رب کہہ سکے۔
نمرود ہی اصل میں فری مسین کے ہاں رب ہے مگر اس کا پتہ جب فری مسین کو چلتا ہے تب تک وہ 30 ڈگری پر ترقی پا چکا ہوتا ہے اور شروع میں نظر آنے والے ایک خالص توحیدی مذہب کی بجائے وہ براہ راست نمرود سے جُڑتا ہے جو درحقیقت ابلیس لعین کی ایک شکل جسے وہ لوسیفر کہتے ہیں مطلب روشنی کا فرشتہ۔ فری میسن میں روشنی علم کو کہا جاتا ہے بصیرت کو کہا جاتا ہے۔ ان کے ہاں یہ شروع میں وعدہ کیا جاتا ہے کہ آپ کو وہ علم و بصیرت ملے گی جو دنیا کے کسی بھی مذہب کی تعلیم سے نہیں مل سکتی۔ وہ علم و بصیرت درحقیقت وہی ہے جو شیطان نے انسان کو سکھایا تھا۔ اس میں اتنا کچھ ہے کہ اگر ابھی لکھنا شروع کیا تو اس سیریز کا مقصد کہ اپنے دشمن کو پوری طرح سمجھا جائے وہ ہی فوت ہو جائے گا۔
اسی لیے ابھی کے لیے جو پہلی ڈگری میں سکھایا جاتا ہے اسی پر کلام جاری ہے۔ فری میسن اپنی 29 ڈگری تک اپنے 5 بنیادی اصولوں پر ہر صورت کاربند رہتے ہیں۔ تا کہ وہ 30 ڈگری پر جا کر وہ پراڈکٹ تیار کر سکیں جس کسی بھی وقت کسی بھی صورت ان کے منصوبے کو عملی جامہ بلا تامل پہنا سکے۔ اسی لیے کوئی عورت کسی صورت فری میسن نہیں بن سکتی کہ وہ کبھی بھی پلٹا کھا سکتی ہے۔ مگر صرف مرد ہی فری میسن بنتا ہے۔ 30 ڈگری فری میسن کوئی عام لوگ نہیں ہوا کرتے۔ بڑے بڑے سیاستدان وہ بھی ہر کوئی نہیں بلکہ ہزاروں میں سے ایک۔ اُن کو اس عہدے تک لایا جاتا ہے۔
آپ کے کرنے کا کام اپنی اپنی تحقیق کریں کہ اب تک گذری سیریز میں بتائے گئے اصولوں پر آپ کی ںظر میں کون کون سا سیاستدان پورا اترتا ہے۔ وہ پانچ اصول پہلے جاری کئے جا چکے ہیں۔ ہمیں بتانے کی ضرورت نہیں بلکہ آپ کو جب پتہ چلے اُس کے ہر پہلو پر غور کریں کہ وہ کون کون ہیں۔ سیاستدان اس لیے کہ نیو ورلڈ آرڈر کے بعد صرف سیاستدانوں کے لیے 30 ڈگری اور اُس سے اوپر کے عہدے مختص ہیں۔ باقی سب اس سے نیچے رہتے ہیں چاہے وہ کوئی بھی ہوں۔ یاد رہے سیاست دان صرف سیاست دان نہیں ہر وہ بندہ جس کے ہاتھ میں عوامی طاقت ہے یا آ سکتی ہے یا اس کا عہدہ اس کا متقاضی ہے وہ سب اس میں شامل ہیں۔ باقی آپ سب خود سمجھدار ہیں!۔

https://photos.app.goo.gl/HwW3yob1k7Jcb3fm2

میسن بننے کے لیے لازمی قواعد

کے وائے ای سیریز

SCOTTISH RITE OFFICIAL REQUIREMENTS,

While they are stated in slightly different words in various jurisdictions (and a few jurisdictions may have one or two requirements beyond these), they basically are as follows:

Being a man, freeborn, of good repute and well-recommended;

A belief in a Supreme Being;

Ability to support one’s self and family;

Of lawful age; and

Come to Freemasonry of their “own free will and accord”.

ماحول کے تعامل کا بہترین تجربہ کہ کیسے ماحول کے تعامل کی وجہ سے ہمیں سورج غروب ہوتا نظر آتا ہے؟


ہمارے فرانسیسی مسلم دوست برادرم علی میگ کا بھی اسی ایٹماسفیرک ریفریکشن پر کیا گیا تجربہ بھی ملاحظہ فرمائیں. کہ کیسے سورج طلوع و غروب ہوتا دکھائی دیتا ہے.
اسی کو حقیقی و اصلی سائنس بولتے ہیں جسے کوئی بھی متعلقہ ذرائع استعمال کر کے دہرا کر ثابت کر سکے،

https://m.facebook.com/story.php?story_fbid=2199120550318162&id=100006607150667

Debunking of the “Top Ten Reasons Why We (allegedly) Know the Earth is Round (as in a globe)

جیسا کہ ڈاکیومینٹری کے ٹائٹل سے بات واضح ہو رہی ہے کہ یہ کس بابت ہے مزید اس میں راب سکیبا نے بہت خوبصورتی، وضاحت اور تفصیل سے سورج اور چاند پر بھی بہترین دلائل دیے ہیں وہ بھی فیزیکل تجربات سے نہ کہ کسی سیمولیٹر یا توجیح سے۔
ٖٖفلیٹ ارتھرز کے لیے بہترین ڈاکیومینٹری