History of Flat Earth & it’s Reality according to Islam

کتاب الارض المسطحۃ
باب ارض المسطحۃ کی تاریخ اور حقیقت
اپریل 2018 میں ہم نے یہ باب بطور رسالہ حقیقۃ الارض من القرآن الحکیم کے نام سے جاری کیا تھا ۔جو مکرم صاحب کے ارض المسطحۃ کے خلاف لکھے گئے ایک مضمون کا تعاقب تھا۔ رسالہ جاری ہونے کے بعد محترمی مکرم صاحب سے بحث و مباحث دوبارہ سے شروع ہوئی اور اُن کو پیش کیے گئے حقائق جو اِس رسالے اور ہماری انکے ساتھ بحث میں اُن کے سامنے رکھے گئے تھے، اُنھوں نے اپنے مؤقف سے رجوع فرمایا۔ چونکہ یہ رسالہ اپنے آپ میں ایک جامع کلام تھا اور ترتیبی لحاظ سے ہماری کتاب کا حصہ تھا۔اِسی وجہ سے ہم نے اِسے اپنی اِس اہم کتاب الارض المسطحۃ کا حصہ بنانے کا فیصلہ کیا تاکہ قارئین کو مکمل کلام ایک ہی جگہ میسر ہو۔ چونکہ محترمی مکرم صاحب اپنے مضمون سے رجوع کر چکے تھے لہذا اِس رسالے کو علمی تعاقب کے اصول سے ہٹا کر ہم اِسے بطور باب جاری کر رہے ہیں۔اِس باب میں آپ کو ارض المسطحۃ کی تاریخ، قرآن و سنت کی رو سے اِس کی حقیقت پر مبنی با دلیل مباحث میسر ہونگی۔ ہم نے اِس باب میں پوری احتیاط کے ساتھ حوالہ جات ہر ممکن مقام پر ساتھ ساتھ دے رکھے ہیں۔ قرآن کی آیات کے ترجمے کے لیے مولانا جونا گڑھی ؒ کے ترجمہ سے استفادہ کیا گیا ہے۔ قرآن کی تفسیر کے لیے عالم اسلام کی سب سے معتبر اور متفقہ تفسیر ابن کثیر کے تخریج شُدہ نسخے المصباح المنیر سے اسفتادہ کیا گیا ہے۔ قرآن کے الفاظ کی لغوی مباحث میں امام راغبؒ کی مشہور و معتبر لغت مفرادات القرآن سے استفادہ کیا گیا ہے تاکہ قارئین کو سب سے بہترین اور اصل کلام دلیل کے ساتھ مطالعہ کرنے کے لیے مل سکے۔ باب میں حسب روایت گلوبرز حضرات کا کلام لال سیاہی اور “” کے اندر واضح لکھا ہوگا۔
باب: ارض المسطحۃ کی حقیقت
اس لنک میں موجود ہے؛


https://drive.google.com/open?id=17Alcz3J4C9x03FSK6UTfewRbiZVJN7p5



Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *